اینٹیں

January 18th, 2018 / 07:26 AM / Karachi
کچھ دن پہلے گھر آتے ہوئے راستے میں میں نے ایک دیوار دیکھی جس کی ہر اینٹ الگ الگ سائز کی تھی لیکن پھر بھی دیوار قائم تھی مجھے یہ ڈر لگا کہ کہیں گر نہ جائے اگلے دن پھر وہیں سے گزرا دیوار اپنی جگہ پر قائم تھی اسے دیکھ کر اپنے معاشرے کے لوگ یاد آگئے سب ایک جیسے نہیں پھر بھی معاشرہ قائم ہے اور اتنی مضبوطی سے قائم ہے کہ اس کے بنائے ہوئے اصولوں کے لیے لوگ خدا کو بھی چھوٹا سمجھتے ہیں یہ دیوار اتنی . جلدی نہیں گرے گی لیکن اس کی اینٹیں گرنے لگی ہیں